New Mp3 mp4 Songs Free Download H4A
what is life Only those who give will get - those who sow will reap


what is life Only those who give will get - those who sow will reap
زندگی کیا ؟
میرے نزدیک زندگی ایک تھکا دینے والی چیز ہے۔ایسی تھکاوٹ جسکو آپ اُتار بھی نہیں سکتے۔
بلند حوصلہ لوگ زندگی سے خوب لطف اٹھاتے ہیں ۔ انکو کسی بھی بات سے کوئی خاص فرق نہیں پڑتا بس وہ اپنی ہی مستی میں گم رہتے ہیں۔ زندگی کو بہت بلند پیمانے پر جانچتے ہیں۔ایسی لوگ خود بھی خوش رہتے ہیں اور دوسروں کیلئے انسپریشن ہوتے ہیں۔قوم کا مستقبل ہوتے ہیں ۔ ہارنا کبھی سیکھا ہی نہیں ہوتا ۔ ہواؤں میں اڑنا چاہتے ہیں مگر ایسے خوب سیرت لوگوں میں کچھ ایسے بھی ہوتے ہیں جو خود کے لیے تو ہر آسانی چاہتے ہیں مگر دوسروں کی تکلیف کا سبب بن جاتے ہیں اور ایسے لوگ اتنے پُر اعتماد ہوتے ہیں کہ انکو دوسروں کے دُکھ درد تک کہ احساس نہیں ہوتا۔بس خود کی مستی میں گم رہتے۔
دوسری طرف کمزور دل ، احساسات کے مارے لوگ ہیں۔ جو ہر فیصلہ دل سے اور اپنے جذبات کے تحت کرتے ہیں۔ہلکی سی خلشِ انکو بکھیر دیتی ہے۔وہ ٹوٹ جاتے ہیں ۔ لوگوں کا منفی رویہ انکو مار دیتا ہے ۔ وہ ہار جاتے ہیں۔ چھوٹی سی خوشی ملنے پر پاگلوں کی طرح خوش ہوجاتے ہیں اور ہلکی سی آزمائش پر ہمت ہار دیتے ہیں۔
کوئی جیسا بھی انسان ہے آخر زندگی اُسے ہرا ہی دیتی ہے۔جیسے کچھ لوگ محبّت میں ایسا ہار جاتے ہیں کہ پھر اُن کی ہر خوشی چھن جاتی ہے۔کچھ لوگ تو ایسے ہوتے کہ اپنا مستقبل تک خراب کر بیٹھتے ہیں۔ہر اُمید نہ اُمیدی میں بدل جاتی ہے ۔وہ یقین کرنا چھوڑ دیتے ہیں ۔ خود اعتمادی کمزور ہوجاتی ہے۔ دنیا سے سامنا کرنا چھوڑ دیتے ہیں۔ ڈر جاتے ہیں۔
کچھ لوگ حالات سے ہار جاتے ہیں جتنی بھی کوشش کرلیں اپنے لیے وہ سہولیات نہیں لا پاتے جو وہ چاہتے ہیں۔وہ پھر ہر جاتے ہیں ۔دوسروں کو دیکھ دیکھ کر کڑھتے ہیں اندر ہے اندر مر رہی ہوتے ہیں۔
اب بچوں کی مثال لے لیجئے کوئی بھی چیز جب انکو نہیں ملتی وہ کیسے پاگلوں جیسے روتے ہیں ۔ وہاں بڑوں کو اکثر غصہ آجاتا ہے کیوں کہ بچوں کی ضرورت نہیں پوری کے سکتے ۔اب یہاں دونوں ہا ر جاتے ہیں ۔ بچہ اپنی تمنا کا گلا دبا دیتا ہے اور بڑے بچے کی اس ہار سے ہار جاتے ہیں۔
بزرگ لوگوں کی مثال لیں۔ پوری زندگی محنت کی اور بچوں کو پالا انکیلیے آسان زندگی کی تگ و دو میں اپنی ہڈیوں کی طاقت ختم کر بیٹھے اب یہاں بچوں کی باری تھی مگر بچے اب اپنی زندگی میں مصروف ہیں ۔اُن کے پاس اب ان بوڑھوں کیلئے وقت ہے نہیں ہے ۔تو یہاں بڑ ے بزرگ ہر جاتے ہیں
غرض کہ بچہ ، جوان، بوڑھا سب سب ہار جاتے ہیں۔
اب جانوروں کو بھی دیکھ لیں ۔اپنے مالک کیلئے کام کرتے ہیں مگر پھر بھی مالک ڈنڈوں سے پیٹتے ہیں ۔ہر کام مار مار کر لیا جاتا ہے۔آخر وہ بھی تو تھک جاتے ہیں۔میں نے اکثر جانوروں کی آنکھوں میں پانی دیکھا ہے ۔اللہ جانے شاید وہ آنسو ہوتے ہیں۔آخر انکو بھی درد ہوتا ہے وہ بھی ہار جاتے ہیں مگر افسوس وہ تو بتا بھی نہیں سکتے ۔
اب پرندوں کو دیکھ لیں ۔ اپنا گھونسلا بنانے میں انتہا کی محنت کرتے ہیں پھر سہی درخت کی تلاش کرتے ہیں اور پھر اپنے بچوں کیلئے دانہ لانے کا انتظام کرتے ہیں ۔مگر حالات ایسے ہوتے ہیں کہ درخت کاٹے جائیں رہے ہیں ۔اُنکے رہنے کی جگہ نہیں بچتی ۔بچوں کو سنبھالنے کی الگ پریشانی ایسے حالات میں آخر وہ بھی ہر جاتے ہیں۔
غرض کہ ہر جاندار زندگی کے ہاتھوں ہار جاتا ہے۔
اس کے بعد آتا ہے زندگی سے ہار کے موت کی طرف جانے کا وقت ۔ اب اس میں بھی ہم ہار جاتے ہیں ۔ زندگی بھر زندگی کو جیتنے کے انتھک کوشش میں ہار ے لوگ موت سے بھی ہار جاتے ہیں کیوں کے انکو عمل کا وقت نہیں ملا۔
صرف وہ لوگ موت کو جیت جاتے ہیں جو اللہ کو جیتتے ہیں ۔ دنیا کیلئے نہیں اللہ کیلئے جیتے ہیں ۔وہ پھر زندگی کو بھی جیت جاتے ہیں اور موت کو بھی۔مبارک ہو انکو اور میری دعا ہے کہ ہم سب اس دنیا کے جھوٹے دکھاوے سے بچ جائیں اور اپنی ہار کو جیت میں بدل کر دنیا اور آخرت کو جیت لیں (آمین)
جو دو گے وہ ہی ملے گا٫ جو بو گے وہ ہی کاٹو گے

0 Comments