New Mp3 mp4 Songs Free Download H4A
Muhammad SAW Beautiful Quotes About Prayer

Muhammad SAW Beautiful Quotes About Prayer 


نماز میں مسنون تلاوت
 عارف باللہ مرشدی حضرت واصف منظور صاحب نور اللہ مرقدہ کو ہمیشہ دیکھا کہ موقعہ موقعہ کی سنتوں کا اہتمام کرتے اور کرواتے تھے ، سفر ہو یا حضر ، ہر حال میں آپ کی عادت مبارکہ یہی تھی ، حضرت مولانا سعید احمد خان صاحب مہاجر مدنی رحمہ اللہ کا قول نقل فرماتے تھے کہ ذکر سے مقصود یہ ہے کہ ہمیں موقعہ موقعہ کی دعاؤں کا اہتمام ہو ، یہ افضل ذکر ہے ، اللہ تعالی کے راستے میں نکل کر مسنون دعاؤں اور مسنون اداؤں کا اہتمام کیا جائے ، صرف دس سورتوں پر اکتفاء نہ کرے بلکہ اپنی سورتوں کی تعداد کو بڑھائے، لمبی لمبی سورتوں کے پڑھنے سے خشوع پیدا ہوتا ہے، دنیا کی لائن سے آگے بڑھنے کی فکر ہوتی ہے تو دین کی لائن سے بھی آگے بڑھے۔
فرمایا کہ جس کی نماز جتنی جاندار ہوگی اس کی زندگی کا ہر عمل اتنا جاندار ہوگا اور نماز دو چیزوں سے جاندار بنتی ہے ،
 ایک  ذکر و دعا کے اہتمام سے
دوسرا نماز کے اندر مسنون تلاوت سے ،
جب ہم نماز پڑھیں تو حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے طریقہ کو دیکھیں، آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی عادت مبارکہ فجر اور مغرب کی سنتوں میں پہلی رکعت میں قُلْ یٰٓاَیُّہَا الکٰفِرُوْنَ اور دوسری رکعت میں قُلْ ہُوَ اللّٰہُ اَحَدٌ پڑھنے کی تھی، اسی طرح نماز حاجت اور نماز سفر میں بھی یہی دونوں سورتیں پڑھنے کا معمول تھا، نوافل میں لمبی سورتیں پڑھتے جیسے سورہٴ بقرہ، سورہٴ آل عمران، سورہٴ نساء، فرض نمازوں میں مختلف سورتیں پڑھتے، فجر میں کبھی سورہٴ منافقون، کبھی سورہٴ صف، کبھی سورہٴ جمعہ، کبھی سورہٴ اعلیٰ اور سورہٴ غاشیہ پڑھتے ، جمعہ کی فرض نماز میں سورہٴ اعلیٰ اور سورہٴ غاشیہ پڑھتے تھے، مغرب میں کبھی والتین اوراس کے بعد کی چھوٹی چھوٹی سورتیں پڑھتے تھے، عشاء میں والشمس وضحٰھا، لااقسم بھذا البلد پڑھتے تھے، غرض مختلف سورتوں کا پڑھنا ثابت ہے ، بات یہ ہے کہ جس کے دل جتنی اللہ و رسول کی عظمت ہوگی ، اس لئے یہ سب کرنا سہل ہے ، اللہ کے راستے میں نکالنے سے مقصود بھی یہی ہے کہ بندہ کے دل میں دین کی عظمت پیدا ہوجائے تاکہ احکامات پر عمل کرنا آسان ہو۔

0 Comments